gototopgototop
We have 50 guests online

پاکستان

آرمی کے انٹیلی جنس اداروں نے نیکٹا کے ماتحت آنے سے انکار کردیا
Written by nasir   
Wednesday, 02 July 2014 00:40

فوج سے متعلق انٹیلی جنس اداروں نے وزارت داخلہ کے ماتحت قائم ہونیوالے انسداد دہشت گردی کے قومی ادارے ٹیکٹا کے ماتحت کام کرنے سے معذرت کرلی اور اس ضمن میں اپنے تحریری تحفظات سے سیکرٹری داخلہ کو آگاہ بھی کر دیا ہے۔ حکومتی ذرائع کے مطابق وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار کے مقتدر اداروں سے ورکنگ ریلیشن شپ بہتر نہیں رہی، جس کی بنیادی وجہ نیکٹا بتائی گئی ہے۔نیکٹاکے تحت جوائنٹ انٹیلی جنس ڈائریکٹوریٹ قائم ہونا ہے جس کو تمام انٹیلی جنس ایجنسیاں جواب دہ ہوں گی۔ تاہم فوج سے متعلق حساس اداروں نے اس بارے اپنے تحفظات ظاہر کردئیے ہیں اور وہ اتھارٹی کے ماتحت آنے کو تیار نہیں۔اداروں نے موقف اپنایا کہ ایجنسیاں خود مختار اور آزاد طریقے سے اپنے انتظامی سیٹ اپ کے تحت کام کرتی ہیں، وہ نیشنل کرائسز مینجمنٹ سیل کو وقتاً فوقتاً انٹیلی جنس معلومات بھی فراہم کرتی اور تعاون بھی کرتی ہیں مگر ایک ایسی اتھارٹی کے سامنے ان کو جواب دہ بنانا قبول نہیں، جس کے پاس انتظامی اور آپریشنل اختیارات نہ ہوں۔ مقامی پرنٹ میڈیا کے ذرائع نے بتایا کہ اسی وجہ سے نیکٹا فعال بھی نہیں ہوسکی اور نہ ہی جوائنٹ انٹیلی جنس ڈائریکٹوریٹ بن سکا ہے، ان حساس اداروں نے اپنے تحفظات سے تحریری طور پر بھی وفاقی سیکرٹری داخلہ کو آگاہ کردیا ہے، جو اب وزیر داخلہ سے بات کریں گے اور اس کے بعد ان اداروں اور خود نیکٹا بارے فیصلہ ہوگا۔

 

FORM_HEADER


FORM_CAPTCHA
FORM_CAPTCHA_REFRESH